(50) سفر/ شاعری ۔مدت ہوئی عورت ہوئے

[50] سفر
Safer


گر تُو نہیں تیار حوصلے کے سفر کو
ger to nahi tayyar hosle k safer ko
مجبوریوں سے اپنا تعلق بحال کر
majboriyon se apna taluq bahal kr
مِٹی تیری جو پاؤں پکڑتی نہیں تیرے
mitti teri jo paon pakerti nahin tere
لے جاؤ اپنا مال و متاع بھی نکال کر
ley jao apna mal o mta bhi nikal kr
مجھ کو جواب دینے کا پابند گر نہیں
mujh ko jawab dene ka paband ger nahin
مجھ سے بھی بار بار نہ کوئی سوال کر
mujh se bhi baar baar na koi sawal kr
اِصلاحِِ حال کے لیئے تیار ہے اگر 
islah e hal k liye tayyar hai ager
اپنے کیئے پہ آپ ہمیشہ ملال کر
apne kiye pe ap hamesha malal kr
کھونے کے ڈر سے دوست کے انمول ساتھ کو
khone k dr se dost k anmol sath ko
کرتی ہوں بات میں زرا لہجہ سنبھال کر
karti hoon bat main zara lehja sanbhal kr
ہاتھوں پہ ہاتھ رکھ کے مُقدر نہیں بدلے
hathon pe hath rakh k moqaddar nahin badle
ممّتاز مشکلوں میں ہمیشہ مجال کر
Mumtaz mushkilon mein hamesha majal kr
●●●
کلام: ممتازملک 
مجموعہ کلام:
مدت ہوئی عورت ہوئے 
اشاعت: 2011ء
●●● 
100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں