(60) معصوم دل/ شاعری ۔مدت ہوئی عورت ہوئے

(60) معصوم دل 


معصوم سا دل میرا انجان سی راہیں
ہر موڑ کھڑی مشکل کھولے ہوۓ باہیں
masoom sa dl mera anjan si rahein
hr morh khari moshkil khole hoe bahein
چاہوں نظرانداز کروں اور میں گزروں
اکثر یہ نہیں ہوتا ہم لاکھ بھی یہ چاہیں
chahon nazer andaz karon aur main guzron
akser ye nahin hota hum lakh bhi ye chahein  
ہونٹوں پہ تمسخر بھری مسکان سجاۓ
بے ایمان تیرے حوصلے کو ہم بھی سراہیں
honton pe
 tamaskhur bhari moskan sajaey
be iman tere hosle ko hum bhi sarahein
ایکا کبھی اچّھوں میں بھی اِتنا نہیں دیکھا
جتنا یہ برے اپنے عقیدے کو نباہیں
aika kabhi achchon mein bhi itna nahin dekha
jitna ye bure apne aqide ko nibahein
ممّتاز کچھ دُشوار نہیں حاصلِ منزل
مکّار سے کچھ دوست اور چالاک نگاہیں
Mumtaz kuche dushwar nahin hasil e manzil
makkar se kuche dost aur chalak nigahein
●●●
کلام: ممتازملک.پیرس 
مجموعہ کلام:
مدت ہوئی عورت ہوئے
 اشاعت:2011ء
●●● 
50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں