(62) فرمان/ شاعری ۔ مدت ہوئی عورت ہوئے

(62) فرمان

وہ روشنی کے واسطے فرمان کریں گے
ہم اس کے لیئے راستے آسان کریں گے
wo roshni k wastey farmaan karein gy
hum os k liye raste aasan karein gy
ہر ایک رکاوٹ کو ہمیں دور کریں گے
یوں اس کے مخالف کو پریشان کریں گے
hr aik rukawat ko hamein dour karein gy
yon os k mokhalif ko parishan karein gy
تم لاکھ ہمیں ناز اور انداز دکھاؤ
یہ ضد ہے ہماری تمہیں مہمان کریں گے
tum kakh hamein naz aur andaz dikhao
ye zid hai hamari tumhein mehman karein gy
ہم اپنے دوپٹّے میں ہر اِک رنگ سجا کر
تیرے لیئے ہر رنگ کا سامان کریں گے
hum apne dopattey mein hr ik rang saja kr
tere liye hr rang ka saman karein gy
اب آنکھ کے پانی سے ہر اِک زخم کو دھو کر
ہم تم پہ محبّت کا بھی احسان کریں گے
ab ankh k pani se hr ik zakhm ko dho kr
hum tum py mohabbat ka bhi ehsan karein gy
ہاں خود کو مٹانے کا اِرادہ جو کیا تو
ہم سب سے نکمّے کو بھی سلطان کریں گے
haan khud ko mitane ka irada jo kia to
hum sub se nikamme ko bhi sultan karein gy
ممّتاز مقاصد کو سمجھ جائیں گے جس دن
قدرت کو بھی ہم خود پہ مہربان کریں گے
Mumtaz maqasid ko samajh jaein gy jis din
qudrat ko bhi hum khud pe meherban karein gy 
●●●
کلام: ممتازملک.پیرس 
مجموعہ کلام:
مدت ہوئی عورت ہوئے اشاعت:2011ء
●●●
100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں