(39) برسر منبر/ شاعری ۔ میرے دل کا قلندر بولے

(39) برسر منبر 

چراغاں بر سر منبر مگر نیچے اندھیرا ہے 
 تجھے اے روشنی کس نے وہاں جانے سے گھیرا ہے 

 کہا یہ روشنی نے بے تحاشا اس سیاہی نے  
  قبا والوں کے دل اندر بھی جسکا ایک ڈیرا ہے

بہت ہمت میں کرتی ہوں مگر میں جا نہیں سکتی 
 بناۓ صورت مومن مگر دل کا لٹیرا ہے  

خدا کے گھر میں اپنے آپ کو دھوکے سے نہ روکے 
 ہمیشہ یہ یقیں رکھنا وہ تیرا ہے نہ میرا ہے  

 کرم کی اک نظر سے جس جگہ قسمت بدلتی ہے  
وہاں ان بد نصیبوں نے کیا سایہ گھنیرا ہے
●●●
کلام: ممتازملک 
مجموعہ کلام:
میرے دل کا قلندر بولے 
اشاعت: 2014ء
●●●
100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں