(43) تعلق/ شاعری۔ میرے دل کا قلندر بولے


(43) تعلق 

تعلق میں گرمجوشی نہیں پہلے سی اب باقی 
   نہ اب وہ رہبری نہ رہبری کا شوق ہے باقی 

 تمہیں کیا زندگی سے اپنے اندر جذب کرنا ہے
  یہ کچھ قسمت ہے اورکچھ اپنا اپنا ذوق ہے باقی  

 وہ اک لمحہ توجہ جس جگہ مرکوز ہو جاۓ 
   اسی اک قیمتی لمحے کا یہ سنجوک ہے باقی 

 نظر نیچی کیئے وہ جنکو  حور العین کہتے ہیں
   انہیں حاصل کیئے جانے پہ بھی اک روک ہے باقی 

 یہ سورج چاند جو گردش کریں اپنے مداروں میں
 یہ ہی حکم و یقیں ہے تو بڑا دو ٹوک ہے باقی 

  کسی انسان کے اندر  یہ ہی تو سب سے اعلی ہے 
  جوانمردی نکل جاۓ تو پھر اک طوق ہے باقی 

کوئی بھی شام ہو مُمتاز رنگ اسمیں اداسی کا 
 کہ رو شن دن کے پیچھے ایک چھبھتی نوک ہے باقی
●●● 
 کلام:مُمتازملک
مجموعہ کلام:
میرے دل کا قلندر بولے 
اشاعت:2014ء
●●●
100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں