(63) کس کے پاس/ شاعری ۔ میرے دل کا قلندر بولے

(63) کس کے پاس 

خدا سے دور ہوتے ہیں تو کس کے پاس ہوتے ہیں 
خدا کے پاس ہوتے ہیں تو کس سے دور ہوتے ہیں 

یہ ہی اب جان لینا ہے یہ ہی سامان کرنا ہے
کہ جس کے پاس جانا ہے اسی کے حکم چلنا ہے

مجھے میرے نبی کی ہی غلامی مستند ٹہری
نہ اسکو چھوڑ کر ہر گز مجھے رستہ بدلنا ہے

اگر روشن ضمیری مجھ کو ملتی ہے مقدر سے
تو نافرمانی کی سیاہی، نہیں اب منہ پہ ملنا ہے

کوئی سورج کسی بھی بام پر پہنچے مگر سچ ہے
کبھی تو شام ہونی ہے کبھی تو اسکو ڈھلنا ہے

مجھے مکڑی کے جالے کی طرح اس نفس نے جکڑا 
کوئی صورت نکالو یانبی  اس سے نکلنا ہے 

●●●
کلام: ممتازملک 
مجموعہ کلام:
میرے دل کا قلندر بولے
اشاعت: 2014ء
●●●

100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں